Kia SUNNI & SHIAH ka QUR’AN alag alag hai ??? IJMA & TAWATUR kia hai ? (Engineer Muhammad Ali Mirza)

Kia SUNNI & SHIAH ka QUR’AN alag alag hai ??? IJMA & TAWATUR kia hai ? (Engineer Muhammad Ali Mirza)

Today topic is :Kia SUNNI & SHIAH ka QUR’AN alag alag hai ??? IJMA & TAWATUR kia hai ? (Engineer Muhammad Ali Mirza).

Video Information
Title Kia SUNNI & SHIAH ka QUR’AN alag alag hai ??? IJMA & TAWATUR kia hai ? (Engineer Muhammad Ali Mirza)
Video Id zNZvaD5U4Ec
Video Source https://www.youtube.com/watch?v=zNZvaD5U4Ec
Video Image 1678723516 656 hqdefault
Video Views 450580
Video Published 2016-06-22 23:50:34
Video Rating 5.00
Video Duration 00:11:51
Video Author Engineer Muhammad Ali Mirza – Official Channel
Video Likes 4667
Video Dislikes
Video Tags #Kia #SUNNI #SHIAH #QURAN #alag #alag #hai #IJMA #TAWATUR #kia #hai #Engineer #Muhammad #Ali #Mirza
Download Click here

Engineer Muhammad Mirza Ali


Mirza Ali

Muhammad Ali Mirza was born on 4 October 1977 in Jhelum, a city in Punjab, Pakistan. He is a 19th grade mechanical engineer in a government department.

Muhammad Ali Mirza, commonly known as Engineer Muhammad Ali Mirza is a Pakistani Islamic scholar and commentator.

Is engineer Muhammad Ali Mirza Sunni or Shia?

engineer mirza ali

Engineer Muahmmad Ali Mirza is Sunni, Known "Mulim ilmi kitabi".

How do I contact engineer Muhammad Ali?

Engineer Muhammad Ali Mirza

You can call on this phone number, which is "03215900162", and discuss your problem with them.

Who is Mirza Ali of Pakistan?

muhammad mirza ali

Muhammad Ali Mirza, commonly known as Engineer Muhammad Ali Mirza is a Pakistani Islamic scholar and commentator.

What is the age of engineer Muhammad Ali Mirza?

mirza ali

(Engineer Muhammad Ali Mirza) Born: October 4, 1977 (age 46 years) Place: Jhelum Country: Pakistan

What is religion of Engineer Muhammad Ali Mirza?

Engineer Muhammad Ali Mirza is Muslim by religion. He is also known as muslim ilmi kitabi. He says " I,m Muslim Ilmi Kitabi".

What is the Education of Engineer Muhammad Ali Mirza?

He is an engineer by profession. And also a "Pakistani Islamic Scholar". He studied in "University of Engineering and Technology, Taxila".

20 Comments

  1. Loogh tab samjdaar baney gy jab wo research kre gy …padayiii bht zaada zaroori ha .har ak muslim ko padayi krna zaroori ha ..bechare anpad loogh kisi ki bi baat ko sach mann lete ha aur unke saath phr behas krna ky kya sahi ha aur kya galat ha wo mantay hi nhi ha

  2. I AM. SUNNY BUT. I LOVE AHLEBAIT. I AM NOT NASBI.QURAN OF SHIA AND SUNNY IS SAME.ALI BHAYE HAS UPROOTED ULLEMAE SU. JUHLA WHO SING MAWEYA MAVEYA. IN MUHRAM. SHOULD BE ASHAMED OF THEIR ACTIONS.

  3. Aik Hay Allah, Payamber Bhi Aik, Quran Bhi Aik
    Kya Hi Acha Ho Jo Hojaen Musalman Bhi Aik.
    Ali Bhai are you aware of Rashid Khalifa who invented digit 19 in Alquran stating thereunder a Sura which is started by Haroofi Mukati Aat it's letters with reference to particular Haroofi Mukati Aat with its total in Sura are equally divided by digit 19. Rashid Khalifa was lateron killed by some unknown person.What is your opinion on Rashid Khalifa theory.

  4. ALI BAI AIK SWAL HY K AGR HAZRT US AN K KHILAF NIKLNY VALY SHABA BAGHI THY TO OR AJ TAK UNHAI BHAGI OR BALVAIE KAHA JATA HY KIA YE SAHABA KI GUSTAKHI NAHI LAKIN sirf SHIA KO GUSTAKH SAHABA Kh k Mara jata hay laikn ali k khilaf bgavat krny Vala raziallah ye Kia tmasha hy

  5. حضرت عثمان رض کو باغیوں نے نہین اھل مدینہ یعنی اصحاب الرسول نے دوران تلاوت شھید کیا تھا
    کیسے ممکن ھے کہ خلیفہء وقت چالیس روز اپنے شھر مدینے مین محاصرے مین ھو مسجد نبوی مین نماز نا پڑھے اور خلافت کے معاملات سے بے دخل⁦ کردیا گیا
    ھو اور لوگوں کو معلوم ھی نا ھوا ھو۔میرا۔ ایمان شھادت عثمان رض کے واقعے کی تفصیل پڑھ صحابہ کے کردار سے اٹھ چکا ھے

  6. وارثانِ قُرآن بہ نفسِ قُرآن

          قُرآن میراث ہے اور اللہ نے اِس کے وَارث مصطفے بندوں کو بنایا (سورة فاطرآیت-32)–  کیونکہ  وارث  ہمیشہ  میراث سے  اَفضل  ہوتا ہے اِسی لیئے اگر وَارث پر مصیبت آجائے تو جان  بچانے کے لیئے پنی میراث (یعنی جائداد، مال و دولت) کو صرف کر دیتا ہے–  اِسی افضلیت کے تناظر میں جہاں قُرآن اَلعِلم ہے (سورة آل ِ عِمراَن آیت-61)، وہاں وارثانٍ قُرآن بابُل عِلم، رَّاسِخُونَ فِي الْعِلْمِ اور أُوتُوا الْعِلْمَ (جنہیں عِلم سے نوازا گیا) ہیں– قُرآن کا حقیقی مفہوم اللہ کے علاواہ عِلم میں راسخ ہستیاں جانتی ہیں (سورة آل ِ عِمراَن آیت-7)–  ”۔ ۔ ۔ اگر تم نہیں جانتے تو اہلِ ذکر سے پوچھو‟ (سورة النّحل آیت-43)– قُرآن ذکر ہے (سورة الحِجر آیت-9) اور وارث اہلِ ذکر– ”اگر کوئی قُرآن ہوتا جس کے وسیلے پہاڑ چلاے جاتے یا  زمین کے فاصلے طے کیئےجاتے یا  مرُدوں  سے  کلام کیا جا سکتا  تو  یہ قُرآن ہے ۔ ۔ ۔‘‘ (سورة الرّعد آیت-31)–  قُرآن  کی اصل جگہ  أُوتُوا الْعِلْمَ کے سینے ہیں (سورة انکبوت آیت-49)، یعنی أُوتُوا الْعِلْمَ قُرآنی اوصاف کے مظہر  ہیں– ”أُوتُوا الْعِلْمَ کے دَرجات ہم بہت زیادہ بلند کر دیں گے‟ (سورة مُجادلہ آیت-11)– قُرآن واضع نورِ ہدایت ہے (سورة النِّسَاء آیت-174) اور وارث مجسمِ نورِ ہدایت–  قُرآن مُهَيۡمن (اَمین،  غالب، حّاکم، محّافظ، نگہبان) ہے (سورة المَائدة آیت-48)، اور وارث اَمین، محّافظ، نگہبان اور اّلا کلُ  ِغالب ہیں– قُرآن بے عیب ہے یعنی اِس  ہیں کوئی کجی نہیں (سورة الزُّمر آیت-28)، اور وارث ہرعیب سے پاک– قُرآن معصوم ہے یعنی باطل  کا اِس کے پاس گزر ناممکن ہے (سورة فصِلَت  آیت-42)،  اور وارث بھی معصوم ہستیاں  ہیں–  بہ کتاب بصیرت،  حُجت، عقل  اور فکر ہے (سورة الأعرَاف آیت-52)، اور وارث صاحبِ بصیرت اور حُتّ- اللہ ہیں– قُرآن وَاضح بیان اورمُسلمانوں کے لیۓ ہدایت، خوشخبری اور رحمت ہے (سورة النّحل آیت-89)، اور وارث نورِ ہدایت اور رحمت ہیں–  قُرآن حکمت سے سرشار ہے (سورة یٰس آیت-2)، اور وارث حِکمت کی معراج– یہ کتاب برحق ہے  یعنی  اِس میں  سچ کے سوا  کچھ نہیں (سورة فَاطر آیت-31)، اور وارث اہلٍ حق کیونکہ 9 ہجری  میں جب نجران کے عیسَایوں سے حضرت عیسیٰ عَلَیْہ السَّلَام  کی ولدیت کے مسعلے پر  اتفاق نہ ہوسکا تو اللہ کے حکم پر حضور نے انھیں مباہلے کی دعوت دی  (سورة آل ِ عِمراَن آیت-61)، اور اِس دعوتِ عام  میں جو  کہ جنگِ صداقت تھی  آپ  صرف صدیق  ہستیوں (مولا علی،  امام حسن و حسُین عَلَیْہ السَّلَام اور حضرت فاطمہ سلام اللہ  علیہا) کو  ساتھ لے کر مباہلے کے لیئےتشریف لائے؛  لیکن عیسَایوں کے بڑے  پادری عبدل مسیح  نے مباہلہ کرنے سے  انکار کر دیا  اور جزیہ  دینا  قبول کیا– اِس  واقعہِ مباہلے کو اللہ نے قصہِ حق  کہا (سورة آل ِ عِمراَن آیت-62)–  قُرآن عظیم ہے  یعنی بلند  رتبے  والا (سورة  الحِجر آیت-87)،  اور  وارث  نباءعظیم ‏‏(عظیم خبر: غدیر خم میں  اعلانِ  ولایت مولا علی عَلَیْہ السَّلَام)–  قُرآن مبین  ہے یعنی درخشاں  اور مبالغے سے پاک  کلام (سورة یٰس آیت-69)، اور وارث اِمام  ِمبین (سورة یٰس آیت-12)– یہ کتاب بے مثل  ہبے  یعنی  تمام  جن و اِنس مل کر قُرآنی سورتوں کی مثل ایک سوره بهی نہیں لا سکتے (سورة یُونس آیت-38)، اور وارث بے مثلِ–  قُرآن  مجید  ہے  یعنی جلیل اُلقدر (سورة ق آیت-1)، اور وارث پیکرِ اقدار  ٍآعلیٰ– قُرآن تبیان ہے یعنی اَپنی بات منواتا ہے (سورة النّحل آیت-89)، اور وارث ہر محاز پر غالب رہنے والے– قُرآن فرقان ہے  یعنی حق اور باطل میں فیصلا کرنے والا (سورة الفُرقان آیت-1)، اور وارث حق اور باطل کو عیاں کرنے والے– وقعہ کربلا کے بعد سرِ مبارک  اِمام حسین عَلَیْہ السَّلَام کا  نوکٍ  نیزہ  پر قُرآن کی تلاوت کرنا  اِس  اَمر کی روشن  دلیل ہے–  قُرآن کریم  ہے یعنی بڑے رتبے  والا (سورة  الواقِعَة  آیت-77)،  اور وارث مرتبے  کی معراج–  قُرآن اہِلِ اِیمان کے لیئے شّفا (پیاس بجهانا) یعنی حاجت روا ہے (سورة فُصِلَت آیت-44)،  اور وارث  مالکِ  شّفا– قُرآن  کا  مکمل سمھجنا مشکل ہے (سورة  آل ِ عِمراَن  آیت-7)، اور وارث مشکل کشا  ہیں– قُرآن  طاہر ہے  نیز اِس  کی معنویت  کی گہرائی  تک نہیں پہنچ سکتا مگر  طاہر (سورة  واقعہ  آیت-79)،  اور طہارت کے زُمرے میں  اہلِ بیت  کا  مقام بلند  ترین  ہے کیونکہ  بی بی فاطمہ سلام اللہ  علیہا، مولا علی، اِمام حسن  اور حسُین عَلَیْہ السَّلَام حضور  کے ساتھ چادر کے اندر موجود تھے جب ارشاد ہوا: ”۔ ۔ ۔ اللہ نے یہ  ارادہ  کر لیا  کہ صرف اور صرف  اے  اہلِ بیت تمھیں  ہر نجاست سے  دور  رکھے  اور اِس طرح پاک رکھے جو  پاکیزگی کا حق ہے‟ (سورة الأحزاب آیت-33)–

        قُرآن اَمر ہے (سورة الطّلاَق آیت-5)، اور وارث اُولِی الْأمر–  ”اے ایمان والو! اِطاعت کرو اللہ، رسول اور اُولِی الْأمر  کی ۔ ۔ ۔‟ (سورة النِّسَاء آیت-59)، یعنی اُولِی الْأمر ہستیوں کی  اِطاعت  اِسی طرح  واجب ہے جس طرح اللہ اور رسول کی– بہ نفس قُرآن نہیں ہو سکتا اُولِی الْأمر مگر عِلم میں  رَاسخ اور معصوم (حوالہ: مضمون اِطاعت بہ نفسِ قُرآن)– حضور نے فرمایا، ”میں تمھارے  درمیان دو گراں قدر چیزیں چھوڑے جا  رہا  ہوں  ایک قُرآن  اور دوسری میری عِطرت (اہلِ بیت)، یہ دونوں ایک  دوسرے سے جدا نہ ہوں گے یہاں تک کہ قیامت میں حوض کوثر پر مجھ سے نہ  آن ملیں،  جوشخص  اِن  دونوں سے تمسّک رکھے  گا  وہ  یقیناً  نجات  یافتا  ہے  اور جس  نے دوری  اختیار کی  وہ  یقیناً ہلاک ہو جائے گا، جب  تک  ان  دونوں سے تمسّک رکھو گے  ہرگز گمراہ  نہ ہو گے‟  اور یہ کہ، ”میرے  بارہ  خلیفہ ہوں گے جن  سب  کا  تعلق قبیلہ قریش سے ہو گا اور اِن میں آخری مُحَمَّد المھدی ہو گا‟ (صحاح ستہ)–  ”اے  ایمان  والو! ﷲ سے ڈرتے  رہو  اور اہلِ  صدق (کی معیّت) میں شامل رہو‟ (سورة توبہ آیت-119)–  کیا وہ اِس کے سوا اور کسی بات کے منتظر ہیں کہ اُن کے پاس فرشتے  آئیں یا خود تمہارا  پروردگار آئے یا تمہارے  پروردگار  کی کچھ نشانیاں آئیں (مگر) جس روز تمہارے پروردگار کی کچھ نشانیاں آئیں گی تو  جو نفس  پہلے  ایمان نہیں  لایا ہوگا یا  اُس نے  ایمان  لانے کے بعد کوئی بھلائی نہیں کی اُس کے ایمان  کا  کوئی فائدہ  نہ ہوگا،  (پیغمبر اُن سے) کہہ دو کہ تم بھی  انتظار کرو ہم بھی  انتظار کرتے ہیں‟ (سورة  الأنعَام  آیت-158)–  حضور نے فرمایا،” میرے بارویں خلیفہ کا  جب ظہور ہوگا تو آسمان سے عیسَیٰ (وارثِ انجیل) آئیں گے اور نماز پڑھیں گے مُحَمَّد المھدی (وارثٍ قُرآن) کے  پیچھے‟ (

Back to top button